شرعی سوالات

واہب اپنی زندگی میں جس کو چاہے اپنی جائیداد کا مالک بنا سکتا ہے البتہ وارث کو محروم کرنے ایسا کرنا گناہ ہے

سوال:

میں تنہا اپنے مکان و جائداد کا ما لک ہوں نہ میرا کوئی سگا بھائی ہے نہ اور کوئی دوسرا، تو اپنی جائداد اگر اپنے نوا سے یا اپنے داما دکو دینا چاہوں تو اس پر آپ شرع کے مطابق ہم کو جواب دیں ، کہ میں شرعاً دے سکتا ہوں؟

جواب:

            بے شک اپنی زندگی میں جس کو چاہیں مالک بنا دیں کہ ہبہ کی صحت کے لیے واہب کا عاقل بالغ ہونا اور شی موہوب کا مالک ہونا شرط ہے اس لیے آپ اپنی جائداد کسی آدمی دینا چاہیں دے سکتے ہیں۔ ہاں اگر کسی وارث کا حق مار کر دوسرے کو دینا چاہیں تو نہ منع ہے لیکن آپ جس کو دیں گے وہی مالک ہو جائے گا۔ اور اگر ضرر نہ دینا ہو تو کسی ایک کو دینے میں بھی کوئی حرج نہیں۔

  (فتاوی بحر العلوم، جلد5، صفحہ10، شبیر برادرز، لاہور)

  (فتاوی بحر العلوم، جلد5، صفحہ19، شبیر برادرز، لاہور)

لا وصیۃ لوارث

  (فتاوی بحر العلوم، جلد5، صفحہ19، شبیر برادرز، لاہور)

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button