شرعی سوالات

قرض دے کرمشروط طور پر کچھ کھانایا خدمت لینا بھی سود ہے

سوال:

زید نے بکر کو کچھ روپیہ تجارت کرنے کو دیا ہے اور زید نے اپنی تجارت میں شرکت بھی قائم رکھی۔اب زید اپنے روپیہ کے ذریعے سے جو بکر کے ذمہ خوراک کھاتا ہے اور بکر اپنی خوشی سے کھلاتا ہے اور بکر ہر طرح کی خدمت کرتا ہے اور جس وقت زید بکر سے روپیہ لے گا ایک حبہ خوراک کا اپنی جمع میں سے مجرا ن دیگا ۔اب زید نے بکر سے روپیہ لے لیا ،بکر نے خوراک کھلانا اور خدمت کرنا چھوڑ دی ،اس صورت میں جو زید نے کھایا اور خدمت کرائی وہ سود تو نہیں ؟

جواب:

جب زید خوراک کا روپیہ مجرا نہ دیگا ،محض اس وجہ سے کھانا ہے کہ اس کا روپیہ بکر کے پاس ہے تو یہ کھانا ناجائز ہے اور سود کہ قرض کے ذریعہ سے یہ نفع حاصل کرتا ہے  اور جب قرض سے کسی قسم کا نفع حاصل کیا ہے تو سود ہے۔

 (فتاوی امجدیہ،کتاب الرباء،جلد3،صفحہ 204،مطبوعہ  مکتبہ رضویہ،کراچی)

متعلقہ مضامین

Leave a Reply

Back to top button