مضامین

فقہی قواعد کی تقسیم

فقہی قواعد کی تقسیم

تمام فقہی قواعد ایک نوع اور ایک ہی مرتبہ کے نہیں ہیں بلکہ یہ مختلف انواع واقسام اور مختلف مرتبہ کے ہوتے ہیں  لہذا ہم جملہ قواعد کو  تین اعتبار سے تقسیم کر سکتے ہیں .

پہلی تقسیم : وسعت اور شمولیت کے اعتبارسے.

دوسری تقسیم : اتفاق اور اختلاف کے اعتبار سے.

تیسری تقسیم : قاعدے ے مصادر کے اعتبارسے.

پہلی تقسیم : وسعت اور شمولیت کے اعتبار سے

فقہی قواعد کی تین قسمیں ہیں.

  1. وہ فقہی قواعد جو اپنی وسعت کے اعتبار سے تقریبا تمام فقہی ابواب کو شامل ہو اور وہ چھ قاعدے ہیں.[ الأمور بمقاصدها , اليقين لا يزول بالشك , المشقة تجلب التيسير , الضرر يزال , العادة محكمة,اور  إعمال الكلام أولى من إهماله].
  2. وہ قواعد جن کا مجال وسعت بہت کم اور کسی خاص باب ہی کے فروعات سے خاص ہو جس کو ضوابط کہتے ہیں جیسے : کل کفارۃ سببہا معصیۃ فہی على الفور.
  3. وہ فقہی قواعد جو بہت سارے فقہی ابواب پر شامل ہواور وہ وسعت اور شمولیت کے اعتبار سے پہلی قسم سے کمتر ہو اور اس کی دو قسمیں ہیں :
    1. وہ قواعد جو کسی قاعدہ کبرى کے تابع ہو جیسے : الضرورات تبیح المحظورات یہ قاعدہ المشقۃ تجلب التیسیر کے تابع ہے .
    2. وہ قواعد جو کسی قاعدہ کے تابع نہ ہو بلکہ خود مستقل ہو قاعدہ ہو جیسے:  الاجتہاد لا ینقض  بالاجتہاد وغیرہ.

دوسری تقسیم :

اتفاق اور اختلاف کے اعتبار سے قواعد کی دو قسمیں ہیں .

متفق علیہ قواعد اور اس کی دو قسمیں ہیں :

    • أ‌- وہ قواعد جن پر تما م مذاہب کا اتفاق ہو جیسے پانچ قواعد کبرى.
    • ب‌- وہ قواعد جن پر اکثر مذاہب کا اتفاق ہو اور یہ ۱۹ قاعدے ہیں جسے ابن نجیم نے ذکر کیا ہے جیسے : التابع تابع   اور الحدود تسقط بالشبہات وغیرہ.

مختلف فیہ قواعد اور اسکی دو قسمیں ہیں :

    • أ‌- وہ قواعد جن کی صحت پر فقہی مذاہب علماء کرام کے درمیان اختلاف جیسے علامہ ابن نجیم کے ذکرہ کردہ ۱۹ قاعدے سے زیادہ علامہ سیوطی رحمہ  نے جن قواعدکو ذکر کیا ہے جیسے الرخص لا تناط بالمعاصی  وغیرہ.
    • ب‌- وہ قواعد جن کی صحت پر کسی خاص مذہب کے علماء کرام درمیان اختلاف موجود ہو اور اس طرح کے قواعد عام طور استفہام کے صیغہ کے ساتھ ذکر کئے جاتے ہیں,جیسے : الجمعۃ ظہر مقصورۃ أو صلاۃ على حیالہا؟

تیسری تقسیم : مصادر کے اعتبار سے

اس کی دو قسمیں ہیں.

  • قواعد منصوصہ یعنی وہ قواعد جن کی شان میں نص شرعی وارد ہے جیسے : الیقین لا یزول بالشک , لا ثواب إلا بالنیۃ وغیرہ.
  • قواعد مستنبطہ یعنی وہ قواعد جن علماء دین نے احکام کے استقراء سے نکالاہے جیسے ما غیر الفرض فی أولہ غیرہ فی آخرہ.

متعلقہ مضامین

Leave a Reply

Back to top button