ARTICLES

دم کی ادائیگی کرنے والے کیااپنے دیئے گئے دم کا گوشت کھا سکتا ہے ؟

الاستفتاء : کیا فرماتے ہیں علمائے دین ومفتیان شرع متین اس مسئلہ میں کہ دم میں دیئے گئے جانور کا گوشت کیا دم کی ادائیگی کرنے والا خود کھاسکتا ہے یا فقراء پر صدقہ لازمی ہے جبکہ یہ دم کسی جرم کی وجہ سے لازم ایا ہے ؟ (سائل : محمد حنیف c/oمفتی عبد الرحمن،عزیزیہ، مکہ)

جواب

باسمہ تعالی وتقدس الجواب : ۔صورت مسؤلہ میں دم میں دیئے گئے جانور کا گوشت دم کی ادائیگی کرنے والا نہیں کھاسکتا۔اور نہ ہی کوئی ایسا شخص کھا سکتا ہے کہ جو صاحب نصاب ہو۔ چنانچہ امام شمس الدین ابو بکر محمد سرخسی حنفی متوفی490ھ لکھتے ہیں : وعلیہ التصدق بلحمہ بعد الذبح علی فقراء الحرم، وان تصدق علی غیرہم من الفقراء اجزاہ عندنا؛ لان الصدقۃ علی کل فقیرٍ قربۃ۔(115) یعنی،اس پر(دم کی ادائیگی کرنے والے پر) ذبح کے بعداس کا گوشت حرم کے فقراء پر صدقہ کرنا لازم ہے اور اگر کوئی ان کے علاوہ (یعنی حرم کے فقراء)فقراء پر صدقہ کرے تووہ ہمارے نزدیک جائز ہے کیونکہ صدقہ کرنا ہر فقیر پر نیکی ہے ۔ اورصدر الشریعہ محمدامجدعلی اعظمی متوفی1367ھ لکھتے ہیں : شکرانہ کی قربانی سے اپ کھائے ، غنی کو کھلائے ، مساکین کو دے اور کفارہ کی صرف محتاجوں کا حق ہے ۔(116) واللہ تعالیٰ اعلم بالصواب یوم الجمعۃ20ذوالحجۃ1439ھ۔31،اغسطس2018م FU-41

حوالہ جات

(115) کتاب المبسوط للسرخسی،کتاب المناسک ،باب الحلق،2/68

(116) بہارشریعت،حج کابیان،جرم اور ان کے کفارے ،1/1163

متعلقہ مضامین

Leave a Reply

Back to top button