بر والدین

خدمت والدین قرب الہی کا ذریعہ ہے

عربی حدیث:

حدثنی بشر بن محمد، أخبرنا عبد اللہ، أخبرنا معاویۃ بن أبی مزرد، سمعت عمی سعید بن یسار، یحدث عن أبی ہریرۃ؛ عن النبی صلى اللہ علیہ وسلم قال: إن اللہ خلق الخلق، حتى إذا فرغ من خلقہ، قالت الرحم: ہذا مقام العائذ بک من القطیعۃ، قال: نعم، ألا ترضین أن أصل من وصلک، وأقطع من قطعک؟ قالت: بلى یا رب، قال: فہو لک. قال رسول اللہ صلى اللہ علیہ وسلم: فاقرؤوا إن شئتم: {فہل عسیتم إن تولیتم أن تفسدوا فی الأرض وتقطعوا أرحامکم}.

اردو ترجمہ:

حضرت ابوہریرہ رضی اللہ تعالی عنہ سے مروی ہے کہ نبی اکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے ارشاد فرمایا :

اللہ تعالیٰ جب مخلوق کی پیدائش سے فارغ ہواتو رحم نے عرض کیا:”یہ اس شخص کی جگہ ہے جو قطع تعلقی سے تیری پناہ مانگے۔“

اللہ تعالی نے ارشاد فرمایا:

 ”ہاں !کیا تو اس بات پر راضی نہیں کہ جو تجھے اپنائے گا ،میں اسے اپناؤں گا اور جو تجھے چھوڑے گا ،میں اسے چھوڑ دوں گا ۔“

 رحم نے عرض کی :               کیوں نہیں !یا رب ۔

اللہ تعالی نے ارشاد فرمایا:       یہ مقام تیرا ہوا ۔

رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے ارشاد فرمایا :

اگر چاہو تو یہ آیت پڑھو: {فہل عسیتم إن تولیتم أن تفسدوا فی الأرض وتقطعوا أرحامکم}ترجمہ: پس اے کمزور ایمان والو ! اگر تم حکمران بن جاؤ تو کیا تم اس بات کے قریب ہو کہ تم زمین میں دہشت گردی کرو اور اپنے رشتے کاٹ دو ۔       (محمد،22)

۔

تخریج الحدیث:

البخاری( ۵۹۸۷)( ۷۵۰۲)( ۴۸۳۰)۔

کتاب: والدین سے حسن سلوک

کتاب: بر الوالدین، مؤلف: امام محمد بن اسماعیل بخاری رحمہ اللہ

ماخوذ از:
کتاب: بر الوالدین، مؤلف: امام محمد بن اسماعیل بخاری رحمہ اللہ
حوالہ جات:
کتاب: والدین سے حسن سلوک

متعلقہ مضامین

Leave a Reply

Back to top button