بر والدین

حسن سلوک  نیکی ہی ہے

عربی حدیث:

 حدثنا إبراہیم بن المنذر، حدثنا معن، عن معاویۃ، عن عبد الرحمن بن جبیر بن نفیر، عن أبیہ، عن نواس بن سمعان الأنصاری؛ أنہ سأل رسول اللہ صلى اللہ علیہ وسلم عن البر والإثم؟ فقال: البر حسن الخلق، والإثم ما حاک فی نفسک فکرہت أن یطلع علیہ الناس.۔

اردو ترجمہ:

نواس بن سمعان انصاری رضی اللہ عنہ  فرماتے ہیں کہ انہوں نے رسول اللہ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم سے نیکی اور گناہ کے بارے میں پوچھا۔ آپ صلی اللہ علیہ  وآلہ وسلم نے ارشاد فرمایا:

” نیکی“ اچھے اخلاق کا نام ہے اور ”گناہ“ وہ ہے کہ جو وہ ہے جو تیرے دل میں کھٹکے اور تم چاہتے ہو کہ میرا وہ کام دوسروں کو پتہ نہ چلے۔

۔

تخریج الحدیث:

ابو نعیم  فی "معرفۃ الصحابہ”(۵۷۷۹،۲۳۵۱،۴)،

الادب المفرد(۳۰۲،۲۹۵)۔

کتاب: والدین سے حسن سلوک

کتاب: بر الوالدین، مؤلف: امام محمد بن اسماعیل بخاری رحمہ اللہ

ماخوذ از:
کتاب: بر الوالدین، مؤلف: امام محمد بن اسماعیل بخاری رحمہ اللہ
حوالہ جات:
کتاب: والدین سے حسن سلوک

متعلقہ مضامین

Leave a Reply

Back to top button