بہار شریعت

حج و عمرے میں جوں مارنا

حج و عمرے میں جوں مارنا

مسئلہ ۱: اپنی جوں اپنے بدن یا کپڑے میں ماری یا پھینک دی تو ایک میں روٹی کا ٹکڑا اور دویا تین ہوں تو ایک مٹھی اناج اور اس سے زیادہ میں صدقہ (درمختار ۳۰۰ج۲‘ عالمگیری ص۲۵۲ج۱‘ بحر ص۳۴۔۳۵ج۳‘ جوہرہ ص۲۲۶‘ تبیین ص۶۶ج۲‘ منسک ص۲۵۲)

مسئلہ ۲: جوئیں مرنے کو سر یا کپڑا دھویا یا دھوپ میں ڈالا جب بھی یہی کفارے ہیں جو مارنے میں تھے (درمختار و ردالمحتار ص۳۰۰ج۲‘ عالمگیری ص ۲۵۲ ج ۱ ‘ بحرص ۳۴ ج ۳ ‘ جوہرہ ص ۲۲۶ ‘ تبیین ص ۶۶ ج ۲ ‘ منسک ص ۲۵۲)۔

متعلقہ مضامین

مسئلہ ۳: دوسرے نے اس کے کہنے یا اشارہ کرنے سے اس کی جوں ماری جب بھی اس پر کفارہ ہے اگر چہ دوسرا احرام میں نہ ہو (درمختار و ردالمحتار ص۳۰۰ج۲‘ عالمگیری ص۲۵۲ج۲‘ بحر ص۳۴ج۳‘ جوہرہ ص۲۲۶‘ منسک ص۳۵۲)

مسئلہ ۴: زمین وغیرہ پر گری ہوئی جوں یا دوسرے کے بدن یا کپڑوں کی ‘ مارنے میں اس پر کچھ نہیں اگر چہ و ہ دوسرا بھی احرام میں ہو (بحر ص۳۴ج۳‘ عالمگیری ص۲۵۲ ج۱‘ درمختار و ردالمحتار ص۳۰۰ج۲‘ جوہرہ ص۲۲۶‘ تبیین ص۶۶ج۲‘ منسک ص۲۵۲)

مسئلہ ۵: کپڑا بھیگ گیا تھا سکھانے کے لئے دھوپ میں رکھا اس سے جوئیں مر گیئں مگر یہ مقصود نہ تھا تو کچھ نہیں (عالمگیری ص۲۵۲ج۱‘ بحر ص۳۴ج۳‘ تبیین ص۶۶ج۲‘ منسک ص۲۵۲‘ متوسط)

مسئلہ ۶ : حرم کی خاک یاکنکری لانے میں حرج نہیں (عالمگیری ص۲۵۲ج۱‘ بحر ص۴۴ج۳)

یہ مسائل کتاب بہار شریعت سے ماخوذ ہیں۔ مزید تفصیل کے لئے اصل کتاب کی طرف رجوع کریں۔

متعلقہ مضامین

Leave a Reply

یہ بھی پڑھیں:
Close
Back to top button