شرعی سوالات

بیع کی تعریف و شرائط

سوال:

بیع کسے کہتے ہیں؟ جو چیز ایک کو بیچ دی، جس کا تحریری ثبوت بھی ہے پھر اسے دوسرے کو بیچنا کیسا؟ ملخصا

جواب:

شریعت میں ایجاب و قبول ہو جانے کے بعد بیع مکمل ہو جاتی ہے اور بائع (بیچنے والا) اور مشتری (خریدنے والے) میں سے کسی کو فسخ کرنے کا اختیار نہیں رہتا۔ اور مسلمان کو تحریر کی کوئی ضرورت نہیں ہے۔ صرف زبان سے ایجاب و قبول کر لینے سے بیع مکمل ہو جاتی ہے ۔ اور مسلمان کو اپنے کئے ہوئے عقد کو پورا کرنا لازم ہے۔ لہذا صورت مسئولہ میں جب زید نے اپنی زمین بکر کے ہاتھ بیچ دی تو وہ دوبارہ کسی کے ہاتھ اسے نہیں بیچ سکتا ہے۔ اس نے جن لوگوں کے ہاتھ دوبارہ بیچی ہے، بیچنا ناجائز ہے۔ اسے چاہئے کہ وہ دوسری بیع کو فسخ کر دے۔

(وقار الفتاوی، جلد 3، صفحہ 260، بزم وقار الدین، کراچی)

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

یہ بھی پڑھیں:
Close
Back to top button