بہار شریعت

ایام اقامت میں کیا کریں

ایام اقامت میں کیا کریں

(۲۹)مفرد اور قارن تو حج کے رمل وسعی سے طواف قدوم میں فارغ ہولئے مگر متمتع نے جو طواف و سعی کئے وہ عمرہ کے تھے حج کے رمل و سعی اس سے ادا نہ ہوئے اور اس پر طواف قدوم ہے نہیں کی قارن کی طرح اس میں یہ امور کرکے فرغت پالے ۔لہذا اگر وہ بھی پہلے سے فارغ ہولینا چاہے تو جب حج کا احرام باندھے اس کے بعد ایک نفل طواف میں رمل و سعی کرلے اب اسے بھی طواف زیارت میں ان امور کی حاجت نہ ہوگی۔

(۳۰) اب یہ سب حجاج (قارن ‘متمتع ، مفرد کوئی ہو ) منی کے جانے کیلئے مکہ معظمہ میں آٹھویں تاریخ کا انتظار کررہے ہیں ایام اقامت میں جس قدر ہو سکے نرا طواف بغیر اضطباع و رمل و سعی کرتے رہیں کہ باہر والوں کے لئے یہ سب سے بہتر عبادت ہے اور ہر سات پھیروں پر مقام ابراہیم علیہ الصلوۃ والتسلیم میں دو رکعت نماز پڑھیں ۔

(۳۱) زیادہ احتیاط یہ ہے کہ عورتوں کو طواف کیلئے شب کے دس گیارہ بھے جب ہجوم کم ہو لے جائیں ، یونہی صفا و مروہ کے درمیان سعی کیلئے بھی

(۳۲) عورتیں نماز فرودگاہ ہی میں پڑھیں ۔ نمازوں کیلئے جو دونوں مسجدکریم میں حاضر ہوتی ہیں نادانی ہے کہ مقصود ثواب ہے اور خود حضور ﷺ نے فرمایا کہ عورت کو میری مسجد میں نماز پڑھنے سے زیادہ ثواب گھر میں پڑھنا ہے ۔ ہاں عورتیں مکہ معظمہ میں روزانہ ا یک بار رات میں طواف کرلیا کریں اور مدینہ طیبہ میں صبح و شام صلوۃ وسلام کے لئے حاضر ہوتی رہیں

(۳۳)اب یامنی سے واپسی کے بعد جب کبھی رات دن میں جتنی بارکعبہ معظمہ پر نظر پڑے لآ الہ الااللہ واللہ اکبر تین بار کہیں اور نبی کریمﷺ پر درود بھیجیں اور دعا کریں کہ وقت قبول ہے۔

یہ مسائل کتاب بہار شریعت سے ماخوذ ہیں۔ مزید تفصیل کے لئے اصل کتاب کی طرف رجوع کریں۔

متعلقہ مضامین

Leave a Reply

Back to top button