ARTICLESشرعی سوالات

احرام کے بغیر طواف میں عورت چہرہ نہیں کھولے گی

استفتاء : ۔ کیا فرماتے ہیں علماء دین و مفتیان شرع متین اس مسئلہ میں کہ طواف میں اکثر عورتوں کو دیکھا ہے کہ وہ چہرہ کھولے ہوئے ہوتی ہیں اور عورت کو احرام میں تو منہ کھلا رکھنے کا حکم ہے ، عام طواف میں بھی کیا اس کا حکم ہے کہ وہ منہ کو کھلا رکھے ؟

(السائل : نور بیگ از لبیک حج گروپ، مکہ مکرمہ)

جواب

باسمہ تعالیٰ وتقدس الجواب : احرام میں عورت کو چہرہ کُھلا رکھنے کا حکم ہے کہ حدیث شریف ہے :

’’ إِحْرَامُ الْمَرْأَۃِ فِیْ وَجْہِہَا‘‘ الحدیث

یعنی، عورت کا احرام اس کے چہرے میں ہے ۔ اس لئے عورت جو طواف حالتِ احرام میں کرے گی اس میں تو اس کا چہرا کُھلا ہو گا مگر جو طواف حالتِ احرام میں نہ ہو اس میں چہرے کو کھلا رکھنے کا حکم نہیں فتنہ کا سبب ہے لہٰذا عام حالت میں عورت طواف کرے تو اُسے اپنے چہرے کو چُھپانا ہو گا۔

واللّٰہ تعالی أعلم بالصواب

یوم الخمیس، 8ذوالحجۃ 1427ھ، 28دیسمبر 2006 م (334-F)

متعلقہ مضامین

Leave a Reply

یہ بھی پڑھیں:
Close
Back to top button