ARTICLES

احرام کی تجدیدکے لئے میقات لوٹنے کاحکم

الاستفتاء : کیافرماتے ہیں علمائے دین ومفتیان شرع متین اس مسئلہ میں کہ وقوف عرفہ سے پہلے محرم بچہ بالغ ہوجائے ، توفرض حج اداہونے کے لئے اسے تجدیداحرام چونکہ ضروری ہے ،تواب پوچھنایہ ہے کہ کیااسے تجدید احرام کے لئے میقات لوٹناضروری ہوگایاپھروہ’’حل‘‘یا’’حرم‘‘میں بھی احرام کی تجدیدکر سکتا ہے ؟

جواب

باسمہ تعالیٰ وتقدس الجواب : صورت مسؤلہ میں اسے تجدیداحرام کے لئے میقات لوٹنالازم نہیں ،بلکہ وہ’’حل‘‘یا ’’حرم‘‘جہاں سے چاہے احرام کی تجدیدکرسکتاہے ،کیونکہ میقات سے فقط احرام کی ابتداءواجب ہے نہ کہ تجدید۔ چنانچہ علامہ سیدمحمدامین ابن عابدین شامی حنفی متوفی1252ھ لکھتے ہیں :

الظاهر ان الرجوع ليس بلازمٍ لان انشاء الاحرام من الميقات واجب فقط. ()

یعنی،ظاہریہ ہے کہ میقات لوٹنالازم نہیں ہے کیونکہ میقات سے فقط احرام کی ابتداءواجب ہے ۔

واللہ تعالیٰ اعلم بالصواب جمعرات،7محرم1442ھ۔26،اگست2020م

حوالہ جات

متعلقہ مضامین

Leave a Reply

Back to top button